Tuesday, 5 May 2015


  1. اسلام آباد(نیوز ڈیسک) خواجہ سعد رفیق نے بیک وقت حلقہ این 125کے متعلق الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے اور نئے الیکشن میں حصہ لینے کا فیصلہ کرلیا۔ الیکشن ٹربیونل کی طرف سے نااہل کیے گئے ن لیگی رہنماءنے پارٹی قیادت سے مشاورت کے بعد یہ فیصلہ کیا۔ ذرائع کے مطابق خواجہ سعد رفیق سپریم کورٹ سے الیکشن ٹربیونل کے فیصلے پر حکم امتناعی جاری کرنے کی درخواست نہیں کریں گے بلکہ نئے الیکشن میں حصہ لیں گے۔پارٹی قیادت نے سعد رفیق کو نئے الیکشن میں حصہ لینے کی تیاری کرنے کی ہدایت کر دی۔فیصلے پر عوام کی جانب سے ملاجلا ردعمل سامنے آرہا ہے۔



بہاولپور(وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے پہلے سولر توانائی منصوبے کا افتتاح کر دیا جس سے 100 میگاواٹ بجلی قومی گرڈ میں شامل ہو چکی ہے جبکہ 300 میگا واٹ کے دوسرے فیز کا بھی افتتاح کر دیا گیا جو کہ رواں برس کے اختتام پر مکمل ہوگا۔

بہاولپور میں افتتاحی تقریب میں وزیراعظم میاں محمد نواز شریف ، وزیراعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف ، چینی سفیر اور دیگر وزراء نے شرکت کی ۔ بہاولپور کے علاقے چولستان میں شمسی توانائی سے بجلی پیدا کرنے کے لیے6500 ایکڑ پر مشتمل قائداعظم سولر پارک بنایا گیا ہے ۔ ڈھائی برس میں مکمل ہونے والے اس منصوبے سے ایک ہزار میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی ۔ پارک کا ایک سو میگاواٹ بجلی پیدا کرنے والے پہلا یونٹ مکمل کر لیا گیا ہے۔ منصوبے کے دوسرے مرحلے کی رواں سال تکمیل سے 3سو میگاواٹ بجلی قومی گرڈ میں شامل ہو جائے گی ۔ پراجیکٹ کا تیسرا مرحلہ 2016 ء میں مکمل ہوگا جس سے 600 میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی ۔ چینی کمپنی ٹی بیان الیکٹرک آپریٹس کمپنی لمیٹڈ اس منصوبے پر کا م کر رہی ہے ۔ اس منصوبے کی تکمیل سے 15 روپے فی یونٹ بجلی پیدا ہوگی ۔ منصوبے کے لئے 75 فیصد فنڈز بنک آف پنجاب اور 25 فیصد حکومت پنجاب نے ادا کیے ۔ قائد اعظم سولر پارک میں بجلی پیدا کرنے کے لیے 4 لاکھ سولر پینل لگائے گئے ہیں ۔ اس منصوبے کے دوسرے اور تیسرے مرحلے کی تکمیل کے لیے مقامی اور بین الاقوامی سرمایہ کاروں کو پرکشش سہولیات دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔



We Promised We Delivered

Another step towards fulfilling the increasing power needs of Pak Quaid-E-Azam solar Park

Monday, 4 May 2015



کراچی )سندھ اسمبلی میں فوج کے خلاف الطاف حسین کے بیان پر قرار داد پیش کرنے کی اجازت نہ ملنے پر تحریک انصاف ، مسلم لیگ فنکشنل اور مسلم لیگ ن کے ارکان کا ایوان میں شور شرابہ اور واک آئوٹ، - 

سندھ اسمبلی کا اجلاس سوا گھنٹے تاخیر سے سپیکر آغا سراج درانی کی صدارت میں شروع ہوا ۔ خیرپور ناتھن شاہ بس پر حادثہ میں جاں بحق افراد ، صوبائی وزیر جاوید ناگوری کے بھائی اکبر ناگوری ، معروف دانشورعبدالواحد آریسر اور ڈی ایس پی عبدالفتح سانگری کے لئے دعائے مغفرت کی گئی ۔ ایم کیو ایم کے خواجہ اظہار الحسن نے اپوزیشن لیڈر کی نشست سنبھال لی ۔ اس موقع پر تحریک انصاف، مسلم لیگ فنکشنل اور مسلم لیگ ن کے ارکان نے فوج کے خلاف الطاف حسین کے بیان پر قرارداد پیش کرنے کی کوشش کی لیکن سپیکر نے اجازت نہیں دی جس پر تحریک انصاف ، مسلم لیگ فنکشنل اور مسلم لیگ ن اراکین اپنی نشستوں پر کھڑے ہوگئے اور شور شرابہ شروع کر دیا جس سے کان پڑی آواز سنائی نہیں دیتی تھی ۔ سپیکر نے وقفہ سوالات شروع کرنے کا اعلان کیا ، اپوزیشن ارکان نے سپیکر کے ڈائس کے قریب پہنچ کر احتجاج کیا ۔ اس کے بعد تحریک انصاف ، مسلم لیگ فنکشنل اور مسلم لیگ ن کے اراکین ایوان سے واک آئوٹ کرگئے ۔ اس موقع پر فنکشنل لیگ کی نصرت سحر عباسی نے کہا کہ حکومتی اراکین قرارداد لانے میں دلچسپی نہیں رکھتے۔ - 

Sunday, 3 May 2015




ساتھی کیخلاف مقدمہ درج کرنے پر ذوالفقار مرزا کا پولیس اسٹیشن پر دھاوا اور توڑ پھوڑ

بدین: ساتھی کے خلاف مقدمہ درج کرنے پر سابق صوبائی وزیر داخلہ ذوالفقار مرزا نے ساتھیوں کے ہمراہ ماڈل پولیس اسٹیشن پر دھاوا بول دیا اور توڑ پھوڑ کی۔
 نیوز کے مطابق ذوالفقار مرزا اپنے ایک ساتھی ندیم مغل کے خلاف مقدمہ درج کرنے پر اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ماڈل پولیس اسٹیشن بدین پہنچ گئے اور تھانے میں موجود پولیس افسر سے بدتمیزی کرتے ہوئے میز کا شیشہ توڑا اور پولیس افسر کا موبائل اٹھا کر زمین پر پٹخ دیا۔ ذوالفقارمرزا نے اپنے ساتھی کے خلاف مقدمہ درج کرانے والے تاجروں کی دکانوں پر بھی تالے لگادیئے۔
ذوالفقار مرزا کا کہنا تھا کہ اپنے ساتھیوں کو تنہا نہیں چھوڑوں گا اور ان کے خلاف انتقامی کارروائی بالکل بھی برداشت نہیں کروں گا۔ ان کا کہنا تھا کہ ان لوگوں کا یہ قصور ہے کہ انہوں نے حق اور سچ کا ساتھ دیا، ذوالفقار علی بھٹو کے لئے کوڑے کھائے، جیلیں کاٹیں اور بینظیر بھٹو کو اپنی ماں، بیٹی اور بہن سمجھ کر ان کا ساتھ لیکن باہر سے مسلط ہونے والے آصف علی زرداری نے بے نظیر بھٹو کی پارٹی کو تباہ و برباد کرکے رکھ دیا ہے، آصف علی زرداری کی پیسوں کی حوس ابھی ختم نہیں ہوئی ہے۔
دوسری جانب واقعے کے خلاف مقامی تاجر کی مدعیت میں ماڈل پولیس اسٹیشن میں ہی ذوالفقارمرزا اور 20 ساتھیوں کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے جس میں ہنگامہ آرائیم، توڑ پھوڑ اور اقدام قتل کی دفعات شامل ہیں۔


                                                                                                                                                                     Pakistan now enjoying strong business culture, good roads: The Economist

Visitors to Pakistan are surprised to discover a strong business culture and good roads as the country is mid-table in the World Bank's ease-of-doing-business rankings, well above India, reports London based The Economist newspaper.
"Those in search of a thriving stockmarket, a stable currency and low inflation would not normally pitch up in Pakistan. It is more readily thought of as a pit of instability than as a source of opportunity. Yet Pakistan is enjoying a rare period of optimism about its economy," The Economist said in it’s a recenent article about Pakistan's economy.
The Economist is a British weekly newspaper owned by The Economist Group London.
The newspaper while highlighting Pakistan's economic performance said that International Monetary Fund (IMF) reckons that the economy will grow by 4.7% next year, the fastest rate in eight years.
Consumer prices rose by 2.5% in the year to March, the smallest increase for more than a decade.
Twice already this year the central bank has lowered its benchmark interest rate.
Some indicators are pointing to an upturn in spending. Compared with a year earlier, cement sales, which are a guide to how much construction is taking place, rose by 5.5% from July to March. Car sales rose by 22% over the same period, the paper said.
It added that a fall of two-fifths in the oil price is a huge slice of luck for a country such as Pakistan. It relies on imported fuel oil for two-fifths of its power supply and is prone to periodic balance-of-payments crises.
The country's import bill can easily overwhelm the foreign-exchange earnings from textile exports and the
remittances that Pakistanis working in the Middle East and Europe send home.
In 2013-14 Pakistan's net import bill for oil came to $12.6 billion, or around 5% of GDP.
But if oil prices stay low, Pakistan could save a total of $12 billion in the next three years, the paper said quoting the IMF. The money could be spent on things with more local content and give the economy a lift, The Ecoconomist said.
It said that the government of Nawaz Sharif takes some credit for the economy's new stability.
It has stuck to an IMF programme agreed to in 2013, a few months after it came to power in Pakistan's first-ever handover from one civilian government to another. Foreign-exchange reserves have more than doubled, to $17.7 billion.

Electricity tariffs have been raised, and some unpaid bills collected, easing the cash burden on hard-pressed distribution companies. Tax receipts have risen, albeit from pitiful levels, in response to efforts to broaden the base and cut exemptions, the paper said.
The Economist said that the revenue agency has sent over 150,000 tax notices to non-payers. More retailers are being drawn into the indirect-tax net. A draft budget aims to bring the budget deficit below 4% of GDP in 2015-16, from a peak of over 8%.
A privatisation drive that stalled last June resumed in April, when the government sold its stake in Habib Bank, the country's largest lender, for $1 billion.
Three-quarters of bids came from foreign investors. Pakistan's stockmarket has doubled in dollar terms
since the start of 2012, thanks in large part to such foreign interest.
Privatisations will only add to the market's variety and appeal. Listed companies are highly profitable, although in part because they often face too little competition, the paper said. "The visitors to Pakistan are
surprised to discover good roads and a strong business culture.
The country is mid-table in the World Bank's ease-of-doing-business rankings, well above India."
The infrastructure is solid enough to support big fast-food chains: McDonald's, KFC, Pizza Hut and Subway have 187 outlets between them, more than in all of Sub-Saharan Africa's "frontier" economies combined, says Daniel Salter, of Renaissance Capital, a stockbrokers, the paper said.
The Economist said that the progress in providing economic stability is encouraging.
But Pakistan needs sustained growth of 5-7% a year if it is markedly to cut poverty-at the last count, nearly a quarter of Pakistanis were below the poverty line.
It said that optimists point to a sharp decline in recent years in the number of deaths from terrorist attacks. Now the army is stepping up operations in regions bordering Afghanistan that harbour the Pakistani Taliban and other militants.
"If we had more security, we could double or triple our orders," The Economist said quoting a businessman.